kalam e muattar
Urdu,  ادب,  بلاگ,  شاعری

ایک ہی دن میں کیا عشق کا سودا میں نے

ایک ہی دن میں کیا عشق کا سودا میں نے

پائی اپنے ہی بغاوت کی یہ جزا میں نے

لوگ اپنے بھی لگے اور پرائے بھی لگے

دیکھی جب اپنی حقیقت کی یہ خطا میں نے

آج بھی ڈوبتی سانسوں نے شکایت کی تھی

کی اپنے پیار کے قیمت کی نہ پرواہ میں نے

چلو! ایک بات سنو، پھر سے بھول جاؤ مجھے

کیا تھا خود ہی تو اس پیار کا سودا میں نے

میں معطر سے ملا ہوں مگر اکثر

جب بھی دیکھا ہے اسے، محوئے تماشا میں نے

مخزنِ درد

Leave a Reply