Literature,  Urdu

آخری جواب

مجھے اب تم یہ کہتی ہو

کہ تجھ کو چھوڑ دوں جاناں

میں خود کو توڑدوں جاناں

چلو پھر ٹھیک ہے جاناں

میں تم کو چھوڑ دیتا ہوں

میں خُود کو توڑ دیتا ہوں

فقط تیری محبت نے

مجھے پاگل بنا کے بھی

تجھے مجھ سے نہیں چھینا۔۔۔

ہزاروں لمحوں میں کھو کر

نہیں مشکل کیا جینا

فقط تیری ہنسی کو بنایا

اپنی ذات کافانوس

جو، ابتک ہر سمے مجھکو

تمہاری یاد دلاتی ہے

سُنو وابسطہ تو تجھ سے

ابھی بھی ساری یادیں ہیں

تیرے پاس کھونے کو شاید

جہاں سارا ہو اے ہمدم

میرے پاس کھونے کو

تیرے سوا کچھ بھی نہیں باقی

انا کو میری سمجھی ہو

خُدائی لینا چاہوں بھی تو

انا اُس پر بھی بھاری یے

چلو اے ہمسفر! تم کو اِجازت ہے

بگھڑنے کا، بچھڑنے کا

کبھی واپس جو آنا ہو

چلی آنا۔۔۔۔

مجھے ویسا ہی پاؤگی

میں یہ وعدہ نہیں کرتا۔۔۔

Leave a Reply