Blog

Welcome to our blog, here you will find everything you want to know. Feel free to like, comment, and share this with your friends and family... If you're going to contribute something, you can contact us at our contact or contribution page... Enjoy your visit...

  • Blog,  Literature,  Urdu

    میں زمیں پر بھی رہا ہوں تو ہواؤں جیسے

    میں زمیں پر بھی رہا ہوں تو ہواؤں جیسے دور سے دیکھتا ہوں، تجھ کو خلاؤں جیسے گرچے خموش ہوں، نہ بولا میں رکھتا ہوں زیست صداؤں جیسے کہتے سب لوگ ہیں عاجز مجھکو رکھتا ہوں ناز خداؤں جیسے کتنا بیزار ہوں زمانے سے اپنی بیزار نگاہوں جیسے پینے بیٹھوں تو میخانے سارے توڑ دیتا ہوں میں پیاسوں جیسے

  • Blog,  Literature,  Urdu

    زندگی مجھ کو دل سے لڑنے دے

    زندگی مجھ کو دل سے لڑنے دے جیسا تیسا ہو وقت گزرنے دے پینے کے بعد توبہ کرلونگا بس ذرا سا مجھے سنبھلنے دے میں طوفانوں سے خوف کھا لونگا پہلے ان سے مجھے ٹکرنے دے آئیں گے وہ ضرور میت پہ پہلے انہیں ذرا سنورنے دے پھر جو پوچھو، بتا ہی دونگا میں پہلے سر دار پہ تو دھرنے دے ساقی! یوں بے رخی نہیں اچھی بس ایک دو جام اور بھرنے دے مفتی کیوں بے سبب الجھتے ہو پہلے کچھ کفر مجھے کرنے دے غزل آئی ہے میری جنگل سے اسے کچھ دن یہانپر چرنے دے تو بے خطا اب نہیں ہو سکتا مجھ سے کہتا ہے جو کہ مرنے دے جھک گئیں آنکھیں اسطرح اُنکی زلف نے کی التجا، بھکرنے دے آنسو یہ بے سبب رواں ہیں دوست اِنہیں کچھ روز اور گرنے دے

  • Blog,  Literature,  Urdu

    کچھ بھی اے دل سدا نہیں ہوتا

    کچھ بھی اے دل! سدا نہیں ہوتا دل میرا اب خفا نہیں ہوتا کوئی کرے جفا اور یا پھر وفا ہمسفر! کچھ دغا نہیں ہوتا شاخِ قفس ہے بوسیدہ سا اب سوزشِ دل سدا نہیں ہوتا میرے ہاں بستیاں اجڑتی ہیں پر کسی کو پتہ نہیں ہوتا غم میرا غم نشیں ستارے ہیں چاند جبھی پورا نہیں ہوتا میرے گلشن میں گولیوں کے پھول میرا ساقی زندہ نہیں ہوتا لُوٹا مجھکو ہے رہزنوں نے آہ بلبلِ من رہا نہیں ہوتا میرے الفاظ ہیں میرے آنسو اِنہیں مجھ سے گلہ نہیں ہوتا

  • Blog,  Literature,  Urdu

    یارب یہ کیسا مقدر ملا مجھے

    یارب یہ کیسا مقدر ملا مجھے پھولوں کو بو رہا تھا تو پتھر ملا مجھے اپنے چمن کی ساری رسوائی بھی سہہ گیا گرچے یہاں بھی کانٹوں کا بستر ملا مجھے میں نے کتنی چاہی تھی محبت زمین پر پہنچا جہاں بھی ٹوٹا سا ممبر ملا مجھے نادان کتنا میں تھا کہ سب کو اپنا سمجھا بدلے میں اپنے دوستوں سے خنجر ملا مجھے دو گھونٹ پینے کے لیے جنت بھی چھوڑ دی پر اس کے بعد اشک کا سمندر ملا مجھے دنیا کے سارے کھیل تماشے فضول تھے ہوس کے ڈھیر میں ہر سکندر ملا مجھے اپنے جنون خیز محبت کے عوض دل اک پھول ہی سہی پر معطر ملا مجھے

  • Blog,  Literature,  Urdu

    لوگوں کے سامنے کتنا سہما ہوا تھا وہ

    لوگوں کے سامنے کتنا سہما ہوا تھا وہ اور میرے ہاں تو رات بھر رویا ہوا تھا وہ آہوں سے مضطرب ہے میرا دل نظر کے ساتھ آہوں میں آج، روح تک ڈوبا ہوا تھا وہ دھواں ہے دل میں، آتشِ سوزاں جگر میں ہے موقع ملے تو دیکھوں، کیا جلا ہوا تھا وہ میں اپنے اپ میں تھا تماشائی جس قدر آخر آہ! اپنے آپ میں کھویا ہوا تھا وہ میں خود میں آگیا ہوں میری جانِ تمنا اتنی سی دیر میں مجھ سے روٹھا ہوا تھا وہ اے شاعرِ غزل نوا، کتنا ستم ہے یہ ہم آئے جب چمن میں تب گیا ہوا تھا وہ محفل ہے دوستوں کی، معطر تم کچھ کہو دیا تھا پھول میں نے جو بکھرا ہوا تھا وہ

  • Blog,  Literature,  Urdu

    چلو ایسا کریں اے دل ستارے بانٹ لیتے ہیں

    چلو ایسا کریں اے دل ستارے بانٹ لیتے ہیں؎ ہم اپنے پیار کے جھوٹے سہارے بانٹ لیتے ہیں چلو اس کو بھی ہم سوداگری سمجھیں تو اچھا ہو کہ ہم اپنے نفعے اپنے خسارے بانٹ لیتے ہیں میں ہوں سنسان ساحل پر، چلو ایسا کریں اے دل ہم اپنی ذات کے کچھ ہی کنارے بانٹ لیتے ہیںتم اپنے دکھ مجھے دے دو، میری خوشیاں سبھی لے لو ہم اپنی عادتیں، جذبے بھی سارے بانٹ لیتے ہیں ہم اپنے شہر میں رسوا معطر اس لیے تو ہیں کہ اپنے شہر کے دکھ درد سارے بانٹ لیتے ہیں ؎ فیؔض کی غزل سے متاثرہ

  • Blog,  Literature,  Urdu

    جو قریب تھے اپنی جان سے

    جو قریب تھے اپنی جان سے وہی لوگ ہم سے بچھڑ گئے جنہیں تھا خیال اپنی زلف کا وہی لوگ آج بکھر گئے ہم تو تھے سراپا جمالِ سوز تھے وہ لوگ بھی کچھ کمالِ سوز تھے وہ لوگ بھی کچھ آہ بے وفا دو قدم ہی جا کے ٹھہر گئے آہ! وہ رقص کر کے کہاں گئے ہمیں چھوڑ کے وہ جہاں گئے سدا رہتے تھے اشکبار وہ خوں پی کے ہمارا، سنور گئے آئے قبر پہ تھے وہ خاص لوگ ہمیں دیکھ کے کچھ وہ رو دیئے کہتے جو تھے ہم سب کو بے وفا وہ خود خاک میں اب اُتر گئے تھی وہ شام کتنی عذاب میں وہ بدنام تھے اضطراب میں جنہیں ہم نے سمجھا تھا نا خدا وہ ہمیں چھوڑ کے کدھر گئے تھے وہ باغیوں میں جو خاص لوگ وہ جو بلبلوں سے خفا ہوئے وہ تھے لوگ کتنے آہ! دلنشیں وہ گئے تو سب معطر گئے

  • Blog,  Literature,  Urdu

    کر کسی بے رحم آتش کے حوالے مجھکو

    کر کسی بے رحم آتش کے حوالے مجھکو دیا بنا کے، اپنے در پہ سجا لے مجھکو میں ہوں صحرائی مجھے مت ڈھونڈ کہیں اپنے من میں کھو کے پا لے مجھ کو کب تک ڈھونڈو گے اندھیروں میں مجھے درد، احساس، اُجالے، مجھ کو دل کے خوشی کے لیے ہوں حاضر شام ہوتے ہی جلا لے مجھکو میں تنہائی میں تیرا مونس ہوں پھر بُلا، رات سے پہلے مجھ کو شبنم نے گل سے گل نے مجھ سے کہا سحر سے پہلے جگا لے مجھ کو ہاں راہِ زیست میں پڑا ہوں میں کچھ تو رحم کر، اُٹھا لے مجھ کو

  • Blog,  Literature,  Urdu

    چراغِ طور جلاؤ، بڑا اندھیرا ہے

    چراغِ طور جلاؤ، بڑا اندھیرا ہے ’’چراغِ طور جلاؤ، بڑا اندھیرا ہے‘‘ (ساغر صدیقی) تم مجھ سے دور مت جاؤ، بڑا اندھیرا ہے اندھیری شب ہے گھٹاٹوپ اندھیروں میں ہوں ذرا تو نور برساؤ، بڑا اندھیرا ہے نہ روٹھو تم، خطا بھی میری ہے مگر جانم میرا قصور مت جاؤ، بڑا اندھیرا ہے فغانِ . شب میں بڑا اثر ہوگا دل کے سرور مت جاؤ، بڑا اندھیرا ہے پلٹ کے آؤگے، لیکن یہ عارضی سا ستم ہے کیا ضرور، مت جاؤ، بڑا اندھیرا ہے عطاگری بھی تیری ہے، ستم گری بھی تیری میرے حضور، مت جاؤ، بڑا اندھیرا ہے ذرا تو رک بھی جاؤ تم لاش دفنانے دو سراپا نور، مت جاؤ، بڑا اندھیرا ہے

  • Blog,  Literature,  Urdu

    خدا کا شکر ہے لوگوں نے ہمیں چھوڑ دیا

    خدا کا شکر ہے لوگوں نے ہمیں چھوڑ دیا نہیں تو ہم تو بڑے بے قرار رہتے تھے جفا کی تیغ بھی تھی اور روشنی کے چراغ ہم ان کے واسطے اے دل! بہت کچھ سہتے تھے ہے شکر وہ بھی بے وفا بے وفا سے نکلے وگرنہ ہم تو اُنہیں دوست اپنا کہتے تھے ہم تو مجبور تھے، بے بسی کے ہاتھ وہ ہمیں بے وفا جو کہتے تھے روٹھتے تھے جب وہ سنگدل سارے ہم انھیں جان بے وجہ کہتے تھے تھا پرفریب تماشا یہ معطر کے دل سبھی تھا جھوٹ جو ہم تجھ سے آکے کہتے تھے

  • Blog,  Literature,  Urdu

    میرے خطوط جلا رہے ہو

    میرے خطوط جلا رہے ہو جہاں سے مجھکو مِٹا رہے ہو لہو بھی میرا نچھوڑ لوگے جو سرخ گنبد بنا رہے ہو قفس میں آتش کہاں سےلاؤں عبث ہی مجھ کو سنا رہے ہو دی تم نے سولی کیا یہ خطا تھی جو آنکھیں مجھ سے چُرا رہے ہو مجھے آذادی کی آس دے کر بڑے قفس میں بسا رہے ہو تھی میری جتنی متاع وہ ساری تمہی نے لوٹی چھپا رہے ہو یہ جھوٹے وعدے،پر آخر کب تک دل میرا یونہی بہلا رہے ہو ملے معطر تو اس سے پوچھو کیا اپنے دل کو بہلا رہے ہو

  • Blog,  Literature,  Urdu

    کب تک محبتوں کے صلیب پہ

    کب تک محبتوں کے صلیب پہ تم چِتا میری آہ! جلاؤ گے آس ٹوٹتی جارہی ہے دل کب تک اس کو تم آہ! بڑھاوگے آنکھوں میری روشنی نہیں کیا وہ دل سے میری چراؤگے پھول تیرے کانٹے تو میرے ہیں مجھے یہ بھی کیا تم بتاؤگے میں ہوں خاک بسر دیوانہ دشت سے کیا مجھکو بلاؤگے آہیں اپنی مثلِ گوہراں کیا یہ سینے میں ہی دباؤگے ہوں جہنمِ بےکراں میں میں کیا یہاں بھی تم ستم ڈھاؤگے آتش و خوں کا بازار ہے کیا تم اس میں مجھ کو جلاؤگے خیر خواہ میرے کہتے ہیں سبھی معطر کو کچھ تم سمجھاؤگے مسکرا کے کہتا ہوں جانِ من اسے کب میرے پاس لاؤگے

  • Blog,  Literature,  Urdu

    شب کو مانگی تھی دعا یاد نہیں

    شب کو مانگی تھی دعا، یاد نہیں مجھے اپنی ہی نوا یاد نہیں راہ پہ کل جو فقیر گزرا تھا دی تھی اس نے کیا صدا یاد نہیں پاس آکر بھی منہ چھپاتے ہو ہے یہ کیا تیری ادا، یاد نہیں میں تیرے پاس تھا محفل میں جو دی تھی تم نے کیا سزا یاد نہیں تم تو دل میں تھے، پھر نجانے کیوں مجھ سے ہوئے تھے جدا، یاد نہیں کل شب پوچھا تھا تم نے مجھ سے کیا تم بھی رکھتے ہو خدا، یاد نہیں کیوں معطر کو مارتے ہو تم کیا یہ ہے سچ کی سزا، یاد نہیں

  • Blog,  Literature,  Urdu

    آپ ملنے کی زحمت گر گوارہ کر لیں

    آپ ملنے کی زحمت گر گوارہ کر لیں قسم تیری کہ ہم دنیا سے کنارہ کرلیں تیرے غمدیدہ نگاہوں میں آنسوؤں کے ہار کبھی ایک بار تو آؤ کہ نظارہ کرلیں جان کتنے کی اپنی ہوگی جان سوچتے ہیں یہ تمہارا کرلیں تجھے اپنا کر اپنے آسماں کا اک دلکش سا ستارہ کرلیں تم کہکشاؤں میں کھو جاؤ اگر دور سے تیرا نظارہ کر لیں اتنی بھی بے رخی نہیں اچھی آؤ! کچھ دیر، تماشا کرلیں کب سے یہ سوچتے ہیں میرے دل اب معطر کو بھی اپنا کر لیں پھر جہاں چاہیں نظارہ کر لیں