Ghazlyat e Mir taqi mir
Classic,  Literature,  Urdu,  ادب,  شاعری

Ghazlyat e Mir

مجھ سوز بعد مرگ سے آگاہ کون ہے

شمع مزار میرؔ بجز آہ کون ہے

بیکس ہوں مضطرب ہوں مسافر ہوں بے وطن

دوری راہ بن مرے ہمراہ کون ہے

لبریز جس کے حسن سے مسجد ہے اور دیر

ایسا بتوں کے بیچ وہ اللہ کون ہے

رکھیو قدم سنبھل کے کہ تو جانتا نہیں

مانند نقش پا یہ سر راہ کون ہے

ایسا اسیر خستہ جگر میں سنا نہیں

ہر آہ میرؔ جس کی ہے جانکاہ کون ہے

Leave a Reply