kalam e muattar
Urdu,  ادب,  شاعری

جب تیری یاد دل میں ہے ہی نہیں

جب تیری یاد دل میں ہے ہی نہیں

جب کوئی بات تجھ میں ہے ہی نہیں

جانے کس بات پہ خفا ہو تم؟

ورنہ تو بات کوئی ہے ہی نہیں

شکر ہے بے وفا نہ تھے ہم کبھی

اب تیری یاد کوئی ہے ہی نہیں

ہر اک منزل پہ رک کے دیکھا ہے

یہ وہم کی رات کوئی ہے ہی نہیں

ساتھ چلتے رہے، مگر خاموش

ایسی تو ذات کوئی ہے ہی نہیں

تم بھی شاید انا پرست سی ہو

ورنہ یہ بات کوئی ہے ہی نہیں

چلیں اب بات ختم کرنی ہے

جیسے کہ بات کوئی ہے ہی نہیں

میں معطر سے کیا کہوں آخر

اس کی تو رات کوئی ہے ہی نہیں

Leave a Reply