kalam e muattar
Urdu,  ادب,  شاعری

کر کسی بے رحم آتش کے حوالے مجھکو

کر کسی بے رحم آتش کے حوالے مجھکو

دیا بنا کے، اپنے در پہ سجا لے مجھکو

میں ہوں صحرائی مجھے مت ڈھونڈ کہیں

اپنے من میں کھو کے پا لے مجھ کو

کب تک ڈھونڈو گے اندھیروں میں مجھے

درد، احساس، اُجالے، مجھ کو

دل کے خوشی کے لیے ہوں حاضر

شام ہوتے ہی جلا لے مجھکو

میں تنہائی میں تیرا مونس ہوں

پھر بُلا، رات سے پہلے مجھ کو

شبنم نے گل سے گل نے مجھ سے کہا

سحر سے پہلے جگا لے مجھ کو

ہاں راہِ زیست میں پڑا ہوں میں

کچھ تو رحم کر، اُٹھا لے مجھ کو

مخزنِ درد

Leave a Reply