Blog Poetry Urdu

جب سے وہ خواب ہو گئے صاحب

جب سے وہ خواب ہو گئے صاحب

خواب، عذاب ہو گئے صاحب

الفتِ جام، آرزوئے قفس

سارے سراب ہو گئے صاحب

اُن کو مجھ سے گلہ نہیں کوئی

ہم جو کمیاب ہو گئے صاحب

جب تھلک زندگی ادھوری تھی

ساز کمخواب ہو گئے صاحب

راز دل کے عیاں ہوں چہرے پر

ناز تیزاب ہوگئے صاحب

کیا معطر ملے مقدر میں

تم کیوں بیتاب ہوگئے صاحب

Last Updated on July 15, 2021 by ANish Staff

Leave a Reply