kalam e Muattar
ادب,  شاعری

زندگی میری

زندگی میری

میں اس سے پہلے بھی

تیری باہوں سے جا چکا ہوں

میں وادئِ موت سے آچکا ہوں

خبر نہ لمحے کی تھی نہ دل کی

کہ دل کن راہوں میں چھوڑ آئے

ہم کن کی باہوں کو توڑ آئے

یہ زندگی ہے کہ روشنی ہے

ہرپل، ہر سمت جو چھا رہی ہے

یہی کیا اپنی خُلدِ بریں ہے

یا پھر یہ شعلہِ آتشیں ہے

جو آگ ہے وہ، اس آگ میں ہوں، وہ آگ میں ہوں

جو زندگی کے تمام رستوں میں جل رہی ہے

جو زندگی ہے۔۔۔

نوائے راز

Senior writer, author, and researcher at AromaNish, specializing in Psychology with an impact on information technology. As a writer, he writes about business, literature, human psychology, and technology, in blogs and websites for clients and businesses. Enjoys reading, writing and traveling when he is not here with us...

Leave a Reply