Blog Literature Urdu

یہ محبتیں تو فریب ہیں

یہ محبتیں تو فریب ہیں

کسی کو بھی تو کچھ ہوا نہیں

ساری گفتگو ہی عبث رہی

کسی کو بھی تو کچھ ہوا نہیں

حسن کا نظارہ فضول تھا

اس نے کسی کو کچھ دیا نہیں

گلا پھاڑ کے کہا تھا اسے

بےخطا سزا، کچھ کہا نہیں

کل وہ شہر بھر سے ملے مگر

میری بات کو کچھ سنا نہیں

مجھے پیار کی تھی وبا لگی

وہ طبیب تھے کچھ لکھا نہیں

اک وفا ہی تو میرے پاس تھی

تھا ہوا نشہ کچھ بچا نہیں

Leave a Reply

Ready to get started?

Are you ready
Get in touch or create an account.

Get Started