kalam e muattar
Urdu,  ادب,  شاعری

تمہیں پتا ہے

تمہیں پتا ہے؟

کہ تم نے مجھ سے

جو یہ کہا تھا کہ

نہ میرے بِن تم کبھی جیو گی

نہ میرے بِن تم مکمل ہوگی

ادھوری، نا تمام رہوگی

تمہیں پتا ہے؟

میں نے کیا سمجھا

یہی کہ میری تلاش اب کہ مکمل ہوگی

مگر یہ تقدیر کو نہ تھا گوارہ

کہ میری تکمیل تجھ سے ہوگی

ادھوری یہ کہانی ہمیشہ

یونہی تو ادھوری رہے گی

تمہیں پتا ہے؟

کہ زندگی میں کبھی کسی کو جو میں نے چاہا

تو زندگی نے سوال اتنے اُٹھا دیئے کہ

میں لڑھکڑایا، فقط دیواروں سے سر ٹکرایا

مگر کسی کو نہ چھوڑ پایا

شکست کھایا بھی تو اگر پھر

میں مرتے دم بھی کھڑا ہوا ہوں

اور لڑ رہا ہوں

جہاں سے، خُود سے اور اِس رسم سے

قسم سے، غم سے، بام و درِ جم سے

تمہیں پتا ہے؟

اکیلا تنہا کھڑا ہوں کب سے

ازل سے تا ابد، ہر غزل سے

نوا سے، تمہاری دلربا ادا سے

خود اپنی ذات کے ہر صدا سے

نگاہِ شاعرِ کے التجا سے

تمہیں پتا ہے؟

Leave a Reply