kalam e muattar
Urdu,  ادب,  شاعری

یہ محبتیں تو فریب ہیں

یہ محبتیں تو فریب ہیں

کسی کو بھی تو کچھ ہوا نہیں

ساری گفتگو ہی عبث رہی

کسی کو بھی تو کچھ ہوا نہیں

حسن کا نظارہ فضول تھا

اس نے کسی کو کچھ دیا نہیں

گلا پھاڑ کے کہا تھا اسے

بےخطا سزا، کچھ کہا نہیں

کل وہ شہر بھر سے ملے مگر

میری بات کو کچھ سنا نہیں

مجھے پیار کی تھی وبا لگی

وہ طبیب تھے کچھ لکھا نہیں

اک وفا ہی تو میرے پاس تھی

تھا ہوا نشہ کچھ بچا نہیں

Senior writer, author, and researcher at AromaNish, specializing in Psychology with an impact on information technology. As a writer, he writes about business, literature, human psychology, and technology, in blogs and websites for clients and businesses. Enjoys reading, writing and traveling when he is not here with us...

Leave a Reply

%d bloggers like this: